ہرہفتے اسکولز اور مدارس ميں خصوصی ٹيکہ مہم چلانے کا اعلان

معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا ہے کہ 11 اکتوبر سے تمام تعلیمی ادارے مکمل طور پر کھولے جا رہے ہیں، جس کے بعد ہر ہفتے اسکول اور مدارس ميں خصوصی ٹيکہ مہم چلانے شروع کی جائے گی۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا ہے کہ 11 اکتوبر سے تمام تعلیمی ادارے مکمل طور پر کھولے جا رہے ہیں۔ 30 اکتوبر کے بعد جزوی ویکسی نیشن اور 30 نومبر کے بعد مکمل ویکسی نیشن نہ کرانے والے افراد پر پابندیاں ہونگی۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ کرونا وبا کا خطرہ ابھی ٹلا نہیں، 6 کروڑ سے زائد افراد کو جزوی یا مکمل ویکسین لگ چکی ہے۔ کرونا ویکسین میں عمر کی حد 12 سال تک لے گئے ہیں، ملک میں کرونا ویکسی نیشن اچھے طریقے سے جاری ہے۔

تاہم حکومت کی جانب سے یہ واضح نہیں کیا گیا کہ بچوں کو کون سے ویکسین لگوانے کی منظوری دی گئی ہے۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ وزارت تعلیم نے ٹیلی اسکول سمیت دیگر اقدامات کیے۔ کرونا وبا میں بچوں کا تدریسی عمل متاثر ہوا۔ تاہم مزید تعلیمی سلسلے کو روکنے کے متحمل نہیں ہوسکتے۔

ڈاکٹر فیصل سلطان کے مطابق کرونا ویکسی نیشن محفوظ ہے۔ عوام سے تلقین ہے کہ بچوں کو بغیر ہچکچاہٹ کرونا ویکسی نیشن کرائیں۔ کرونا ویکسی نیشن سے متعلق جھوٹی خبروں پر توجہ نہ دیں۔ ویکسی نیشن کرونا وبا کے پھیلاؤ کو روکنے میں مدد دے گی۔

واضح رہے کہ اس سے قبل وفاقی وزیر منصوبہ بندی اور نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن کے سربراہ اسد عمر کا کہنا تھا کہ 12 سال اور زائد عمر کے بچوں کی ویکسی نیشن کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اپنی ٹوئٹ میں انہوں نے کہا کہ بچوں کو ویکسین لگوانے میں آسانی کیلئے اسکولوں میں ویکسینیشن کی خصوصی مہم چلائی جائے گی۔

این سی او سی کے اس وقت کے اعداد و شمار کے مطابق ملک میں 27 ستمبر کو کووڈ 19 کی 9 لاکھ 61 ہزار 340 ویکسین لگائیں، اب تک پاکستان نے 7 کروڑ 95 لاکھ 31 ہزار 641 خوراکیں دی ہیں۔

این سی او سی نے عوام کو فوری طور پر ویکسین لگوانے پر زور دیتے ہوئے خبردار کیا تھا کہ ‘یکم اکتوبر سے ویکسین نہ لگوانے والے افراد کو مختلف پابندیوں کا سامنا کرنا پڑے گا’۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ حکومت نے یکم ستمبر سے 17 سال سے زائد عمر کے شہریوں کو ویکسین لگانے کی منظوری دی تھی۔ وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا کہ تھا کہ 17 سال سے زائد عمر کے نوجوانوں کو تعلیمی اداروں میں داخل ہونے کے لیے 15 اکتوبر تک مکمل ویکسین لگوانی ہوگی۔

گزشتہ ماہ کے آغاز میں این سی او سی نے 18 سال سے کم عمر کے شہریوں کے لیے کرونا ویکسینیشن گائیڈ لائنز پر نظر ثانی کی تھی اور کہا تھا کہ انہیں فائزر ویکسین لگائی جائے گی۔ این سی او سی کے بیان میں کہا گیا تھا کہ 18 سال سے کم عمر افراد کو نیشنل ایمیونائزیشن مینجمنٹ سسٹم میں رجسٹریشن کے لیے اپنا بے فارم نمبر فراہم کرنا ہوگا۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں