کشمیر میں کل سے 6 ماہ کیلئے صدارتی راج نافذ

رسائی نیوز ویب ڈیسک: بھارت کی مرکزی حکومت نے مقبوضہ کشمیر میں آج سے صدر راج نافذ کرنے کی منظوری دے دی۔ اس بات کا فیصلہ ریاستی گورنر ستہ پال ملک کے اس رپورٹ پر کیا گیا جو انہوں نے مرکز کو بھجوائی تھی۔ اس ضمن میں پہلے ہی گورنر نے ایک مراسلہ مرکزی وزارت داخلہ کو بھیج دیا تھا، جس میں صدارتی راج کے نفاذ کی سفارش کی گئی تھی۔ شہدائے پلوامہ کی غائبانہ نماز جنازہ وادی کے مختلف علاقوں میں ادا کی گئی۔ جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ وادی کے مختلف علاقوں میں احتجاج کے دوران فورسز کے ساتھ جھڑپوں کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہوگئے۔ بھارتی مظالم کے خلاف چوتھے روز بھی مکمل ہڑتال کی گئی۔ کاروباری مراکز بند رہے جبکہ انٹرنیٹ اور موبائل سروسز بند رہیں۔ پلوامہ اور سرینگر میں غیر اعلانیہ کرفیو کے باعث نظام زندگی مفلوج رہا۔ ضلع راجوری میں دریائے جہلم کے کنارے سے ایک خاتون کی لاش ملی ہے جبکہ راجوری میں نامعلوم شخص نے فائرنگ کر کے ایک ہی خاندان کے 7 افراد کو زخمی کر دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں