کشمیر دھماکا؛ بھارت نےبغیرکسی ثبوت کے خود کش حملے کا ذمہ دار پاکستان کو قرار دے دیا

رسائی نیوزویب ڈیسک:میڈیا رپورٹس کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں بھارتی سیکیورٹی فورسز پر خود کش حملے کے بعد وزیراعظم نریندرا مودی کی سربراہی میں سلامتی سے متعلق کابینہ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں وزیر دفاع، وزیر داخلہ، وزیر خارجہ ، وزیر خزانہ سمیت اہم اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔وزیر اعظم نریندرا مودی نے ہمیشہ کی طرح اپنی انتظامی اور سیکیورٹی کوتاہیوں کا ملبہ پاکستان پر ڈال دیا اور بغیر کسی ثبوت کے خود کش حملے کا ذمہ دار پاکستان کو قرار دے دیا۔ مودی نے الزام لگایا کہ دہشت گردوں کی پشت پناہی کرنے والے پڑوسی ملک نے بڑی غلطی کی ہے جس کی انہیں کڑی سزا بھگتنی ہوگی۔عجلت میں دیئے گئے بھارتی وزیراعظم کے اس بیان کی بڑی وجہ حالیہ انتخابات بھی ہیں جس میں بی جے پی کو شکست دکھائی دے رہی ہے اور وہ ہندو ووٹرز کے جذبات کو اپنے مقصد کے حصول میں استعمال کرتے ہوئے اپنی جیت یقینی بنانے کے پرانے حربے آزما رہی ہے۔کابینہ اجلاس میں پاکستان کا پسندیدہ ریاست کا اسٹیٹس بھی ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ یہ اسٹیٹس عالمی اداری برائے تجارت کے اصول و ضوابط کے تحت ایک ملک دوسرے ملک کو دیتا ہے۔ بھارت نے پاکستان کو یہ اسٹیٹس 1996 میں دیا تھا۔کابینہ اجلاس کے بعد وفاقی وزیر ارون جیٹ لے نے میڈیا سے گفتگو میں مضحکہ دعویٰ کرتے ہوئے بتایا کہ پاکستان کو عالمی دنیا سے تنہا کرنے کے لیے بھارت ہر ممکن ڈپلومیٹک اقدامات اٹھائے گا۔یادرہے کہ بھارت نے پہلے بھی پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا کرنے کی بھڑکیاں ماری ہیں اور ہمیشہ منہ کی کھانی پڑی ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کے بہیمانہ مظالم اب عالمی دنیا سے چھپے نہیں رہے اور بھارت کے لیے اپنا مکروہ چھپانا اب ممکن نہیں رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں