چین کا جدید ترین کوانٹم ریڈار بنانے کا دعویٰ

رسائی نیوز ویب ڈیسک : چین نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے ایسا کوانٹم ریڈار بنایا ہے جس سے جدید ترین اسٹیلتھ طیارے بھی اوجھل نہیں رہ سکتے۔ حال ہی میں چین کے شہر زوہائی کے ایئرشو میں چائنا الیکٹرونکس ٹیکنالوجی گروپ کارپوریشن نے دنیا کا پہلا کوانٹم ریڈار پیش کیا ہے جس سے جدید ترین اسٹیلتھ طیارے بھی اوجھل نہیں رہ سکتے۔ کمپنی نے مزید بتایا کہ پہلی مرتبہ یہ ریڈار 2015 میں ٹیسٹ کیا گیا تھا۔ کوانٹم ریڈار بنانے والی کمپنی کا کہنا ہےکہ عام ریڈار ایک الیکٹرومیگنیٹک شعاع پھینکتا ہے لیکن کوانٹم ریڈار الجھے ہوئے فوٹونز کی دو مسلسل شعاعیں خارج کرتا ہے لیکن ان میں سے صرف ایک شعاع ہی باہر پھینکی جاتی ہے؛ اور کوانٹم فزکس کے تحت دونوں ہی شعاعوں میں تبدیلیاں ہوتی ہیں۔ کمپنی کے شائع کردہ بروشر کے مطابق نیا ریڈار نظر نہ آنے والے طیاروں کی شناخت، ریڈار کی محدود صلاحیت اور برقی جنگ کے مسائل حل کرنے کےلیے ایک بہترین ایجاد ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں