پاکستان کی بھارت اور افغانستان کے پاکستانی سرزمین کو دہشتگردوں کی محفوظ پناہ گاہیں قرار دینے کے الزامات کی شدید مذمت، بھارت اور افغانستان کے الزامات کو مسترد کرتے ہیں ، منیر اکرم

نیویارک۔: پاکستان نے بھارت اور افغانستان کے پاکستانی سرزمین کو دہشتگردوں کی محفوظ پناہ گاہیں قرار دینے کے الزامات کی شدید مذمت کی ہے اور بھارت اور افغانستان کے الزامات کو مسترد کردیا ہے۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں جنگ زدہ ملک افغانستان کی صورتحال پر بحث کے بعد اقوام متحدہ میں پاکستان کے سفیر منیر اکرم نے پریس کانفرنس سے خطاب کیا جس کے دوران انہوں نے بھارت پر کڑی نکتہ چینی کی جو کہ اگست کے لئے سلامتی کونسل کا سربراہ ہے جس نے افغانستان میں امن کےلئے براہ راست شراکت دار ہونے اور پڑوسی ہونے کے باوجود پاکستان کو خطاب کا موقع نہیں دیا انہوں نے کہا کہ حالانکہ ہم نے اس ضمن میں باضابطہ طور پر درخواست بھی دی تھی تاہم اس کے باوجود انکار کردیا گیا۔ انہوں نے اقوام متحدہ کے ہیڈکوارٹر میں کی گئی پریس کانفرنس میں اخباری نمائندوں کو بتایا کہ ہمیں بھارتی صدارت میں انصاف کی کوئی توقع نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کا افغانستان کی صورتحال پر مکمل بیان اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اراکین کو بھیجاجائے گا۔ انہوں نے پاکستان میں دہشتگردوں کی محفوظ پناہ گاہوں اور آماجگاہوں کے بارے میں الزامات کو مسترد کردیا اور کہا کہ یہ الزامات محض افسانوی باتیں ہیں۔

منیر اکرم نے عالمی برادری پر زور دیا کہ القاعدہ ، داعش اور تحریک طالبان پاکستان اور ایسٹ ترکمانستان اسلامک موومنٹ کو کسی بھی ملک پر حملوں کےلئے افغان سرزمین کے استعمال سے روکا جائے۔ کیونکہ دہشتگردی افغانستان اور اس کے ہمسایہ ممالک خاص طور پر پاکستان کےلئے بڑا چیلنج ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو جمعیت الاحرار اور تحریک طالبان پاکستان کو کسی تیسرے ملک کی طرف سے ملنے والی امداد پر خاص طور پر بڑی تشویش ہے۔سفیر منیر اکرم نے خطہ میں صورتحال بگاڑنے والوں کی شدید مذمت کی جو افغان امن عمل کو پٹری سے اتارنے کی کوشش کررہے ہیں جبکہ اس افغان عمل میں سہولت کاری پاکستان نے کی ہے۔ انہوں نے خطہ کی صورتحال خراب کرنے والوں کو بھی متنبہ کیا۔ سفیر منیر اکرم نے مزید کہا کہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے افغانستان کے ہمیشہ سیاسی حل پر زور دیا ہے کیونکہ افغانستان میں پائیدار امن و سیکورٹی کی بحالی کا یہی واحد راستہ ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں