وزیراعظم عمران خان کی رحمۃ اللعالمین اتھارٹی سے متعلق اقدامات کو جلد عملی جامہ پہنانے کی ہدایت

اسلام آباد۔: وزیراعظم عمران خان نے رحمۃ اللعالمین اتھارٹی سے متعلق اقدامات کو جلد عملی جامہ پہنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریاستِ مدینہ اصول پسندی اور اخلاقیات کا عملی نمونہ تھی اور میثاقِ مدینہ انسانی حقوق کا محافظ تھا، اسلامی معاشرہ اپنے دور کا سب سے جدت پسند معاشرہ تھا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو اپنی زیر صدارت رحمتہ اللعالمین اتھارٹی کے جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں وفاقی وزراء پیر نور الحق قادری، شفقت محمود، پروفیسر ڈاکٹر اعجاز اکرم، ڈاکٹر خالد مسعود اور شہزاد نواز کی شرکت جبکہ ڈاکٹر عطاء الرحمن وڈیو لنک کے ذریعے شریک ہوئے۔

وزیراعظم نے کہا کہ صوفیاء کرام نے سیرت کی روشنی میں مقامی لوگوں کو ان کی زبان میں دین کی تعلیمات فراہم کیں، مذہبی تہواروں کو کردار سازی کا ذریعہ بنانے پر زور دیا جائے گا، جامعات میں تحقیق اور غورو فکر سے سیرت کے اہم پہلوؤں کو اجاگر کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کا ہر شہری عاشقِ رسول ﷺ ہے، عشقِ رسول کا سب سے بڑا ثبوت نبی ﷺ کی سیرت پر عمل کرنا ہے۔

اجلاس میں وزیرِ اعظم کو اتھارٹی کے قیام پر پیشرفت سے آگاہ کیا گیا، اتھارٹی کیلئے جامع میڈیا پلان آئندہ ہفتے پیش کر دیا جائے گا۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ جدید طریقہ کار سے نوجوانوں اور بچوں کی سیرتِ طیبہ ﷺ کی روشنی میں کردار سازی پر توجہ مرکوز کی جائے گی، بین الاقوامی سطح پر سیرت کے حوالے سے شعور اجاگر کرنے اور اسلاموفوبیا کا سدِ باب کرنے کیلئے سفارتخانوں کو آن بورڈ لیا جائے گا۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ یونیورسٹیز اور سکولز کے نصاب میں بھی سیرتِ طیبہ کی روشنی میں اخلاقیات کی تدریس شامل کی جائے گی، اسلام اور سائنس میں ہم آہنگی کو اجاگر کرنے کیلئے تحقیق اور اقدامات بھی اتھارٹی کے مقاصد میں شامل ہیں۔ وزیرِ اعظم نے اتھارٹی سے متعلق تمام اقدامات کو جلد عملی جامہ پہنانے کی ہدایات جاری کیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں