نوازشریف خاندان ووٹ، کوٹ اور قوانین کا احترام کرتے ہوئے اپنے مقدمات کا سامنا کرے ،وزیر مملکت زرتاج گل ، وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہبازگل اور ملیکہ بخاری کی پریس کانفرنس

اسلام آباد: وزیر مملکت زرتاج گل ، وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہبازگل اور ملیکہ بخاری نے کہا ہے کہ نوازشریف خاندان ووٹ، کوٹ اور قوانین کا احترام کرتے ہوئےاپنے مقدمات کا سامنا کرے ، ،شریف خاندان 25ارب روپے منی لانڈرنگ کا جواب دے ، قوم ان کی مزید ڈرامہ بازی برداشت نہیں کرے گی، مریم نواز ایک خود غرض خاتون ہیں جن کی سیاست کا محور محض اقتدار ہے وہ پاکستان کی سالمیت ، سرحدوں کے محافظ ، انصاف کے اداروں اور منتخب وزیراعظم کوبلاوجہ نشانہ بنا رہی ہیں ، وہ اپنے والد کی ہر ادارے پر قابض ہونے کی سیاست کو آگے بڑھنا چاہتی ہیں ،

سزایافتہ مجرم کی ضمانت منسوخ ہونی چاہئے ، عدالتوں کے باہر تقریروں کی بجائے مریم نواز ایون فیلڈ اپارٹمنٹ کی رسیدیں دیں ،نوازشریف جیسا جھوٹا ، مکار اور بددیانت کوئی اور نہیں بن سکتا، پاکستان کو بحران سے صرف عمران خان نکال سکتے ہیں ۔بدھ کو پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل وزیر نے کہاکہ مریم نواز پاکستان کی عدالتوں اور محافظ اداروں کو تنقید کا نشانہ بنا رہی ہیں’مریم نواز کا کوئی سیاسی قد کاٹھ نہیں ہے’

مریم نواز ایک مصدقہ چورنی ہیں’ اس کی وجہ سے مسلم لیگ ن کو سینیٹ ‘ کشمیر ‘ گلگت بلتستان اور ہر ضمنی الیکشن میں شکست ہوئی ہے’ مریم نواز اپنی سیاسی حیثیت بہتر بنانے کے لئے عمران خان پر تنقید کررہی ہیں’ عمران خان کو ہر عالمی فورمز پر مدعو کیا جاتا ہے اور ان کا بین الاقوامی سطح پر اثرورسوخ ہے’ مریم نواز کو مسلم لیگ نے یہ ٹارگٹ دیا ہوا ہے کہ وہ اداروں کو بدنام کریں۔انہوں نے عدالتوں میں بھی ہر پیشی پر سرکس اور سیاسی تھیٹر لگایا ہوتا ہے’ گالم گلوچ کی زبان سے ہمیں کوئی فرق نہیں پڑتا’ قوم ان سے سوال کرتی ہے کہ مریم نواز اور ان کے خاندان نے جو کرپشن کی ہے اور لوٹ مار کا جو بازار گرم کئے رکھا ہے

وہ اس کا جواب دیں اور وہ ذرائع بتائیں کہ لوٹی ہوئی دولت کہاں سے آئی اور کہاں ہے کیونکہ فلیٹس کی بینیفشری اونر وہ ہیں ‘وہ لوٹی ہوئی دولت واپس لے کر آئیں اور قطری خط کے علاوہ بھی اپنے ذرائع بتائیں۔انہوں نے کہا کہ مریم نواز کی نہ تو کوئی سیاسی حیثیت ہے اور نہ ہی کوئی سیاسی قد کاٹھ ہے۔صرف گالم گلوچ کرتی ہیں’ قبضہ مافیا ‘ رسہ گیر اور یتیموں اور بیواہوں کی زمینوں پر قبضہ کرنے والوں کو مریم نواز اپنی پارٹی کا سرمایہ قراردیتی ہیں۔ان کے ترجمانوں کی زبان سے کوئی خاتون محفوظ نہیں ہے’گالم گلوچ بریگیڈ کے ارکان آپ کے ترجمان ہیں’مریم نواز کا پوٹ فولیو یہ ہے کہ پاکستان سے چوری اور منی لانڈرنگ کی ہے اورچوری میں نواز شریف کی مدد کرتی تھی۔اسی وجہ سے انہیں سزا بھی ہوئی ہے

۔ وزیراعظم عمران خان کو 22کروڑ عوام نے منتخب کیا ہے اور ہم نے ایک کروڑ 70 لاکھ ووٹ لئے ہیں۔ کشمیر ‘ فلسطین اور امت مسلمہ کے دیگر مسائل پر انہوں نے کھل کر اپنا موقف بیان کیا۔مریم نواز کی باتوں’ بغض و عناد اور گالم گلوچ کی زبان سے حکومت اور عمران خان کو کوئی فرق نہیں پڑتا۔وہ نیب کورٹ پر پتھرائو اور حملہ کرنے کی بجائے اپنی آمدنی کے ذرائع کے حوالے سے اپنے سوالوں کے جواب دیں۔یہ تین سالوں سے ضمانت پر ہیں اور بار بار اپنے وکیل تبدیل کرلیتے ہیں۔ مریم نواز میں کوئی سیاسی سوجھ بوجھ نہیں ہے کیونکہ ان کی کوئی سیاسی تربیت ہوئی ہی نہیں ہے۔ان کی جماعت گدی نشینی والی جماعت ہے۔ سابق وزیراعظم بھی ہاتھ باندھ کر ان کے پیچھے کھڑے ہوتے ہیں۔ مریم نواز کو سیاسی تربیت کی بہت ضرورت ہے۔

پارلیمانی سیکرٹری ملیکہ بخاری نے کہا کہ مریم نواز ایک خود غرض خاتون ہیں جن کی سیاست کا محورمحض اقتدار ہے’ وہ پاکستان کی سالمیت کے محافظوں اور منتخب وزیراعظم سمیت اداروں کو انتشار کی سیاست کی نذر کرنے کی مذموم کوشش کررہی ہیں۔وہ ہر ادارے پر قابض رہنے کی اپنے والد کی سیاست کو لیکر آگے بڑھ رہی ہیں ۔وہ پاکستان کے انصاف کے اداروں پاکستان کی سالمیت کے محافظوں کو متنازعہ بنانے کی کوشش کررہی ہیں تاہم پاکستان تحریک انصاف کا ہر کارکن اس کے سامنے سیسہ پلائی ہوئی دیوار بنے گا۔ہم آئینی اداروں کو متنازعہ نہیں بنانے دیں گے۔ہم انہیں خبر دار کرتے ہیں کہ وہ آئینی اداروں اور پاکستان کی سالمیت کے محافظوں کے خلاف جنگ کا اعلان نہ کریں اگر وہ ایسا کرے گی تو ان کے بیانیہ کو شکست ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ سرٹیفائیڈ مجرم کی ضمانت منسوخ ہونی چاہئے۔وہ پاکستان کے عوام کے پیسے کے ضامن ہوتے ہوئے ان کے پیسے چوری کرنے میں ملوث رہے تو ان کی بیٹی عدالت کے باہر پاکستان کے نظام عدل ‘ وزیراعظم اور محافظوں کے خلاف ہرزہ سرائی کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی اعلیٰ عدلیہ نے خاتون ہونے کی بنیاد پر مریم نواز کو رعایت دی لیکن وہ نیب کے ادارے پر حملہ آور ہوگئی یہ توہین کے زمرے میں آتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پانامہ کیس 2016 میں آیا اس وقت نوازشریف نے پارلیمان میں انہوں نے اپنے ذرائع کیوں نہیں بتائے کہ انہوں نے کن ذرائع سے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس خریدے۔یہ اپنے کیس سے توجہ ہٹانے کی خواہش مند ہیں۔انہوں نے کہا کہ مریم نواز عوام کو گمراہ نہ کریں’ مانیٹرنگ جج ماضی میں بھی لگتے رہے

‘پاکستان کے عوام مجرم سابق وزیراعظم کو قانون کے کٹہرے میں دیکھنا چاہتے ہیں ‘عدالتیں ان کے طرز سیاست کا نوٹس لیں ‘یہ نظام عدل کا مذاق اڑارہی ہیں یہ قانون توڑنے کی عادی ہیں۔وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے کہا کہ لوگوں کے مذہبی عقائد کو نشانہ بنانا افسوس ناک ہے یہ وہی خاندان ہے جنہوں نے سب سے پہلے بے نظیر بھٹو کی کردار کشی کی ‘ جمائما خان پر جھوٹے کیس کئے’ اپنے مخالفین کی خواتین اور خاندانی زندگی پر بہتان تراشی کی۔کسی کو قادیانی اور کسی کو غیر مسلم قراردیا۔انہوں نے کہا کہ مریم نواز کے شر سے اس کے والد ‘ چچا ‘ پارٹی سمیت کوئی بھی محفوظ نہیں وہ سلامتی کے اداروں کو بھی نشانہ بنا رہی ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ مریم نواز کی اس بات سے اتفاق کرتے ہیں کہ عمران خان نوازشریف بننے کی کوشش نہ کریں ،نوازشریف بنتا نہیں پیدا ہوتا ہے ، اس قدر جھوٹا ،

مکار اور بددیانت کوئی کس طرح بن سکتا ہے ، نوازشریف بننے کے لئے آپ کا ضمیر مزاحمت کرے گا ۔ ماضی میں میر جعفر کی صورت میں پہلی بار نوازشریف 1765جبکہ بعد ازاں میر صادق کی شکل میں 1799میں پیدا ہوا اور 200سال بعد 1999میں نوازشریف نے اس ملک کی سلامتی پر شب خون مارا اور وہی میرصادق والی حرکت کی ۔آنے والے 200سال میں شایدکوئی نوازشریف پیدا نہیں ہو گا کیونکہ پوری امت مسلمہ کو اس کا بوجھ اٹھانا پڑتا ہے ، نوازشریف نے اپنے محسنوں پر بھتان تراشی کی ۔ انہوں نے کہاکہ نوازشریف نے عدالت کے سامنے ایک رسید دینی تھی کہ انہوں نے لندن کے اپارٹمنٹ کیسے خریدے

، کیا یہ پیسہ جنتا یا کن کے ذریعے منتقل کیا گیا ۔شہبازگل نے کہا کہ نوازشریف کے دور میں وزیراعظم ہائوس میں جو ہوتا رہا اس دور کے ملازمین سے ہم وہ قصے سنتے ہیں۔ شہباز گل نے کہاکہ ملک میں کرپٹ اور چور بنا جاسکتا ہے ،بے وقوف بنا جاسکتا ہے لیکن شہید بننے کے لئے خون دینا پڑتا ہے ، جعلی پلیٹ لٹس بنا کر باہر جایا جاسکتا ہے لیکن سیاسی شہید نہیں بنا جاسکتا ۔

انہوں نے کہاکہ مریم نوازشریف آئندہ پیشی پر لندن تو کیا پاکستان میں کوئی پراپرٹی نہ ہونے کے بیان پر قوم سے معافی مانگیں ۔ ایک سوال کے جواب میں ملیکہ بخاری نے کہاکہ مریم نواز کی سزا برقرار ہے ، آئین اور اداروں کو متنازع بنانے کی کوئی قانون اجازت نہیں دیتا ۔ ضمانت کی رہائی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے قومی اداروں کی توہین قانون و آئین کی دھجیاں اڑانے کے مترادف ہے ، عدالت اس کا نوٹس لےکہ ایک سزا یافتہ خاتون عدالت کے باہر کھڑے ہو کر پاکستان کے انصاف کے نظام اور سرحدوں کے محافظوں کو تنقید کا نشانہ بنائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں