موسمیاتی تبدیلیوں اور عالمی درجہ حرارت میں اضافے کے پیش نظر قدرتی آفات کا انتہائی خطرہ ہے ،صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا نیشنل ریزیلئنس ڈے کے موقع پر پیغام

اسلام آباد۔: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ موسمیاتی تبدیلیوں اور عالمی درجہ حرارت میں اضافے کے پیش نظر قدرتی آفات کا انتہائی خطرہ ہے ، اس صورتحال سے نمٹنے کے لئے ہمارے اداروں کو مضبوط اور لیس کرنے کے ساتھ ساتھ لوگوں میں آفات کی روک تھام اور تیاری کے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ نیشنل ریزیلئنس ڈے کے موقع پر اپنے پیغام میں صدر مملکت نے کہا کہ یہ دن ہر سال 8 اکتوبر کو منایا جاتا ہے تاکہ آزاد جموں و کشمیر ، خیبر پختونخوا اور اسلام آباد کے لوگوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا جا سکے جنہوں نے اکتوبر 2005 کے تباہ کن زلزلے میں اپنے عزیزوں اور رشتہ داروں کو کھو دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ تباہ کن زلزلے کے نتیجے میں ہزاروں انسانی جانیں ضائع ہوئیں ، اس کے علاوہ لوگوں کے ذرائع معاش متاثر ہوئے اور ملک کے صحت ، تعلیم اور سڑکوں کے بنیادی ڈھانچے کو نقصان پہنچا۔

صدر مملکت نے کہا کہ یہ دن ایک یاد دہانی بھی ہے کہ ہم ایک ایسے خطے میں رہتے ہیں جہاں قدرتی آفات کا انتہائی خطرہ ہے ، اور ہمارے اداروں کو مضبوط اور لیس کرنے اور لوگوں میں آفات کی روک تھام اور تیاری کے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کی سخت ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ کئی برسوں کے دوران پاکستان نے زلزلے ، لینڈ سلائیڈنگ اور حالیہ شہری سیلاب کی صورت میں متعدد قدرتی آفات کا سامنا کیا ہے جس کی وجہ سے قیمتی انسانی جانوں کے علاوہ لاکھوں ڈالر کا نقصان ہوا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے لوگوں نے ہمت اور برداشت کے ساتھ آفات کا سامنا کیا ہے ،

تاہم ہماری صلاحیتوں کو بڑھانے ، موسمیاتی تبدیلی اور گلوبل وارمنگ کے کردار ، آتشزدگی کے واقعات، گرمی کی لہر ، سیلاب اور سائیکلون کی وجوہات کو سمجھنے کے لیے مسلسل کوششوں کی سخت ضرورت ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ کوویڈ 19 کی وبا کے دوران حکومت نے وبائی مرض سے مؤثر طریقے سے نمٹنے کے لئے دانشمندانہ حکمت عملی اختیار کی جس کے تحت سمارٹ لاک ڈاؤن اور لوگوں میں آگاہی پیدا کر کے وبا کے پھیلاؤ پر قابو پایا گیا ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ یہ بتاتے ہوئے خوشی ہوتی ہے کہ عالمی برادری نے وبائی مرض پر قابو پانے کے لیے پاکستان کی حکمت عملی کو بڑے پیمانے پر تسلیم کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان آفات کے خلاف لوگوں اور نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) جیسے اداروں کی استعداد بڑھانے اور پاکستان کو ایک خوشحال اور مضبوط ملک بنانے کے لیے پرعزم ہے۔ آج ہم اپنے مستقبل کی نسلوں کو محفوظ بنانے کے لیے اس سمت میں اپنی توانائیاں لگاتے رہنے کے اپنے عزم کا اعادہ کرتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں