مقبوضہ کشمیر میں اسکول ٹیچر دوران حراست بہیمانہ تشدد سے جاں بحق

رسائی نیوزویب ڈیسک:میڈیا رپورٹس کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ کے علاقے اوانتی پورہ کے رہائشی اسکول ٹیچر رضوان اسد کو بھارتی تفتیشی ادارے نیشنل انویسٹی گیٹنگ ایجنسی (NIA) نے گزشتہ ماہ گھر سے حراست میں لیا تھا جو اسپیشل آپریشن گروپ کے اہلکاروں کا انسانیت سوز تشدد برداشت نہ کرسکا اور دوران حراست جان کی بازی ہار گیا۔ حجاز پبلک اسکول کے نوجوان ٹیچر رضوان کو وادی میں حریت پسند جماعتوں کی حمایت کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا اور اسے جھوٹی وارداتوں کو قبول کرنے کے لیے دباؤ ڈالا جارہا تھا۔ رضوان اسد کو گزشتہ برس اگست میں بھی گرفتار کیا گیا تھا، تاہم عدم ثبوت کی بناء پر رہا کردیا گیا تھا۔ نوجوان ٹیچر کے دوران حراست جاں بحق ہونے پر اوانتی پورہ کے رہائشی احتجاج کے لیے باہر نکل آئے، ضلع پلوامہ کے دیگر علاقوں سے بھی لوگ اظہار یکجہتی کے لیے جمع ہوئے اور بھارتی جارحیت کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے قابض بھارتی فوج نے ہوائی فائرنگ کیں اور آنسو گیس کے شیلز پھینکے۔ قابض بھارتی فوج کے مظاہرین پر پیلٹ گن کے بےدریغ استعمال کے باعث درجنوں مظاہرین زخمی ہوگئے جب کہ آنسو گیس کے شیلز قریب و جوار کے گھر پر بھی گرے جس سے بچے اور خواتین بھی متاثر ہوئیں۔ زخمیوں کو قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں