مالدیپ کی حکومت نے سابق صدر عبداللہ یامین کو گواہوں کو رشوت دینے کے الزام میں گرفتار کرلیا

رسائی نیوزویب ڈیسک: مالدیپ کے سابق صدرعبداللہ یامین کو منی لانڈرنگ کے مقدمے کی سماعت کے دوران گواہان کو رشوت دینے کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا-پولیس حکام کا کہنا ہے کہ سابق صدر عبداللہ یامین کو کشتیوں کے ذریعے مافوشی جیل منتقل کردیا گیا۔ عبداللہ یامین نے گواہان کو بیان تبدیل کرنے کے لیے رشوت دینے کے پولیس کے الزامات کو مسترد کردیا ہے۔سابق صدر عبداللہ یامین کو گزشتہ سال ستمبر میں صدارتی انتخابات میں ناکامی کے بعد منی لانڈرنگ کے الزام میں ٹرائل کا سامنا ہے۔یاد رہے کہ عبداللہ یامین نے 2013 میں حکومت سنبھالی تھی جس کے بعد انہوں نےاپنے کئی مخالفین کو قید یا جلا وطن کردیا تھا۔سابق صدر اپنے 5 سالہ دور حکومت میں انسانی حقوق کے حوالے سے عالمی برداری کی جانب سے شدید تنقید کا شکا رہے۔ انسداد کرپشن کے ادارے نے گزشتہ ہفتے رپورٹ جاری کی تھی جس کے مطابق مالدیپ کے سرکاری میڈیا اینڈ پبلک ریلیشن کارپوریشن میں عبداللہ یامین کے دور میں مبینہ طور پر 7 کروڑ 90 لاکھ ڈالر کی کرپشن ہوئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں