ماحولیاتی تحفظ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے، درآمدی پلاسٹک پر انحصار کم کرنے کیلئے جامع منصوبہ بنایا جائے، وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں فضلے کے انتظام کے حوالے سے اجلاس

اسلام آباد۔: وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ماحولیاتی تحفظ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے، درآمدی پلاسٹک پر انحصار کم کرنے کیلئے جامع منصوبہ بنایا جائے، چین کی پلاسٹک کی درآمد پر پابندی کی پالیسی کو بھی زیر غور لایا جائے۔ بدھ کو وزیراعظم میڈیا آفس سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں فضلے کے انتظام کے حوالے سے اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس میں معاون خصوصی ملک امین اسلم اور سینئر حکام نے شرکت کی۔ اس موقع پر اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ پاکستان میں سالانہ 30 ملین میٹرک ٹن فضلہ میونسپل سطح پر پیدا ہوتا ہے، پلاسٹک فضلہ کل فضلے کا 10 سے 14 فیصد ہے اور سال 2050 تک اس کی مقدار دوگنی ہوجائے گی۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ سال 2020 میں پیدا ہونے والے 3.9 ملین ٹن پلاسٹک فضلے میں سے صرف 30 فیصد ری سائیکل ہوتا ہے، پاکستان نے پچھلے مالی سال 2.4 ارب روپے لاگت کا 35,651 ٹن پلاسٹک درآمد کیا۔

اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ ماحولیاتی تحفظ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ وزیراعظم نے ہدایت کی کہ درآمدی پلاسٹک پر انحصار کم کرنے کے لئے جامع پلان مرتب کیا جائے،اس ضمن میں چین کی پلاسٹک کی درآمد پر پابندی کی پالیسی کو بھی زیر غور لایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں