لاہور سے اغوا چار بچیوں سے پولیس تفتیش میں انکشافات

لاہور: ہنجروال کے علاقے سے اغوا ہونے والی 4 لڑکیوں سے پولیس تفتیش میں کئی انکشافات ہوئے ہیں۔ لڑکیوں نے بیان دیا کہ ہمارے پاس 600 روپے بھی تھے جو گھر سے ساتھ لائی تھیں، ہم نے رکشہ ڈرائیور قاسم سے جی ون جوہرٹاؤن میں ایک خاتون کے گھر چھوڑنے کا کہا تھا، قاسم نے ہم سے خاتون کے گھر جانے کی وجہ بھی پوچھی تھی، عائشہ اور ثمرین نے قاسم کو بتایا وہ اس خاتون کے گھر کام کرتی تھی، وہ خاتون عائشہ اور ثمرین کے ساتھ اچھا برتاؤ کرتی تھی اس لیے ہم وہاں جانا چاہتی تھیں، لیکن رکشہ ڈرائیور قاسم ہمیں جوہرٹاؤن لے جانے کی بجائے اپنے گھر گرین ٹاؤن لے گیا اور پنڈی اسٹاپ پر ہمیں بوتلوں میں نشہ آورچیز ملا کر پلائی۔ لڑکیوں نے بتایا کہ قاسم ہمیں اپنے گھر سے شہزاد کے گھر لے کر گیا، ہمیں رکشہ اور ایک گاڑی پر ساہیوال لے جایا گیا، رکشہ میں قاسم اسکی بیوی کے ساتھ انعم عائشہ اور ثمرین تھیں، ملزم شہزاد ان لائن ٹیسکی چلاتا ہے، شہزاد مجھے ساہیوال میں اپنے گھر لے گیا تھا جہاں پہلے سے گڑیا نامی لڑکی موجود تھی، گڑیا نے بتایا وہ 10 ہزار روپے میں نائٹ پر ہوٹلوں میں جاتی ہے، انعم، عائشہ اور ثمرین کو شہزاد اپنے دوست آصف کے گھر چھوڑ آیا تھا، آصف کی بیوی زینت لڑکیاں دبئی بھجواتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں