سی پی ایل سی جیسے ادارے پولیس اور شہریوں میں بہتر روابط کے لئے موثر کردار ادا کرتے ہیں، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا سی پی ایل سی کی افتتاحی تقریب سے خطاب

میرپورخاص۔: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ سی پی ایل سی جیسے ادارے پولیس اور شہریوں کے درمیان بہتر روابط کے لئے موثر کردار ادا کرتے ہیں، سی پی ایل سی میں کئی گروپس رضاکارانہ طور پر خدمات دیتے رہے ہیں۔ یہ وہ ادارہ ہے جو جرائم اور اغوا برائے تاوان کے سدباب کے لئے کردار ادا کرتا رہا ہے، منشیات کی لعنت ہمارے معاشرے میں خطرناک حد تک پھیل گئی ہے، جسے روکنے کے لئے بھی اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔

میرپورخاص میں سی پی ایل سی کے افتتاح کے موقع پرمنعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ منشیات ہمارے معاشرے کو نقصان پہنچا رہی ہے، بچے ڈرگز کے عادی ہوجاتے ہیں،معاشرے کو پہلے پتہ چل جاتا ہے، گھر والوں کو بعد میں معلوم ہوتا ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ آپ کو اس کی روک تھام کے لئے کوششیں بروئے کار لانی ہونگی تاکہ اس برائی کو پھیلنے سے روک کر نوجوانوں کے مستقبل کو محفوظ بنایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ گورنر سندھ سے کہوں گا کہ سکھر، نوابشاہ اور لاڑکانہ میں بھی ادارے بنائے جائیں۔ انہوں نے کہا میرپورخاص میں یونیورسٹی کے قیام کے لئے کوششیں کی جائیں گی۔

صدر مملکت نے کہا مصنوعی ذہانت کے ذریعے لاکھوں لوگوں میں سے مطلوبہ فرد کی تلاش ایک آسان عمل ہے، ایسی ٹیکنالوجی کے استعمال سےتحقیق کا عمل مزید آسان ہوگیا ہے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے گورنر سندھ ڈاکٹر عمران اسماعیل نے کہا کہ سی پی ایل سی شاندار ادارہ ہے، جہاں عام آدمی بھی پولیس تک موثر رسائی حاصل کرسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو بھی اس ادارے میں شامل کرنے کی ضرورت ہے تاکہ ادارہ مزید آگے بڑھ سکے۔ ہماری کوشش ہے کہ پڑ ھے لکھے نوجوانوں اور خواتین کو بھی اس میں شامل کیا جائے۔ جب تک مقامی کمیونٹی کو شامل نہ کیا جائے مسائل حل نہیں ہوسکتے۔ تقریب میں سی پی ایل سی چیف محمد زبیر حبیب نے بھی ادارے کی افادیت اور اہمیت پر روشنی ڈالی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں