سپریم کورٹ نے پاکپتن مزار اراضی کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دے دی

رسائی نیوزنمائندہ خصوصی اسلام آباد: سپریم کورٹ میں پاک پتن اراضی کیس کی سماعت ہوئی جس میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آپ کہتے ہیں سیکرٹری نے جعلی منظوری دی ہے، کیا نوازشریف نے ریکارڈ کا جائزہ لیا ہے، انہوں نے تو اپنی یادداشت پر ہی سوال اٹھا دیا، نواز شریف کی منظوریاں ریکارڈ پر موجود ہیں۔ چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ میاں صاحب جے آئی ٹی کا رسک لے رہے ہیں، خالق داد لک کی سربراہی میں جے آئی ٹی بناتے ہیں، ٹیم میں آئی بی اور آئی ایس آئی کو بھی شامل کریں گے جس پر نوازشریف کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ نواز شریف جے آئی ٹی کے لئے آمادہ ہو گئے ہیں عدالت جس کو مناسب سمجھے تحقیقات سونپ دے۔ سپریم کورٹ نے ڈی جی نیکٹا خالق داد لک کی سربراہی میں جے آئی ٹی تشکیل دیتے ہوئے ایک ہفتے میں ٹی او آر طلب کرلیے جب کہ خالق داد لک کو بھی آئندہ سماعت پر طلب کر لیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں