سابق وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے فلیگ شپ کیلئے رقم فراہم کرنے کا کوئی ثبوت نہیں ملا:تفتیشی افسر

رسائی نیوزنمائندہ خصوصی اسلام آباد:ا حتساب عدالت اسلام آباد کے جج ارشد ملک نے فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت کی تو سابق وزیر اعظم نواز شریف عدالت میں پیش ہوئے اور ان کے وکیل خواجہ حارث نے تفتیشی افسر محمد کامران پر جرح جاری رکھی۔ محمد کامران نے کہا کہ تفتیش کے دوران ایسی کوئی دستاویز نہیں ملی کہ نواز شریف نے اپنے اکاؤنٹ سے فلیگ شپ، کوئینٹ پنڈ گٹن یا کسی دوسری کمپنی کے لئے رقم فراہم کی۔ حسن نواز کا بھی ایسا کوئی بیان بھی نہیں دیکھا کہ والد کی جانب سے مجھے کوئی ایسی رقم فراہم کی گئی جب کہ دوران تفتیش ایسے کوئی شواہد نہیں ملے کہ حسن نواز پر برطانیہ میں کاروبار سے متعلق کسی بے ضابطگی کا الزام رہا ہو۔ ایسی کوئی دستاویز نہیں ملی جس سے ثابت ہو کہ نواز شریف نے پاکستان یا بیرون ملک کسی اکاؤنٹ سے حسن و حسین نواز کے تعلیمی اخراجات پورے کیے، کسی گواہ نے بھی ایسا کوئی بیان نہیں دیا، دوران تفتیش کسی نے نہیں کہا کہ حسن اور حسین نواز 2000ء اور اس کے بعد نواز شریف کے زیر کفالت رہے، کسی گواہ نے یہ بھی نہیں کہا کہ کمپنی بناتے وقت حسن نواز بے نامی دار تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں