دیگربحرانوں کے برعکس کووڈ -19کے عالمی بحران کے بعد دنیا کے بعض ممالک میں مستحکم مالیاتی و زری پالیسیوں اور تیز رفتار ویکسی نیشن کے باعث معاشی بحالی کا عمل تیزی سے جاری

اسلام آباد۔: دیگربحرانوں کے برعکس کووڈ-19کے عالمی بحران کے بعد دنیا کے بعض ممالک میں مستحکم مالیاتی و زری پالیسیوں اور تیز رفتار ویکسی نیشن کے باعث معاشی بحالی کا عمل تیزی سے جاری ہے۔ عالمی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف) نے اپنی ایک رپورٹ کے میں کہا ہے کہ عالمی سطح پر بہتری معاشی بحالی کے نتیجہ میں اپریل 2021 میں کی گئی آئی ایم ایف کی رواں سال کےلئے 6فیصد کی اقتصادی شرح نمو کا تخمینہ حاصل ہونے کی امید ہے۔ عالمی ادارہ نے کہا ہے کہ دنیا بھرمیں ویکسین کی دستیابی، انفیکشن کی شرح اور پالیسی معاونت کے تضادات کی وجہ سے ٹو ٹریک بحالی کا عمل جاری ہے۔ جی -20 ممالک اور دنیا بھر کے پالیسی سازوں کےلئے یہ صورتحال تھوڑی مشکل ہے تاہم اس کے خاتمہ کےلئے تیز ترین اقدامات کی ضرورت ہے ۔ عالمی ادارہ نے بین الاقوامی برادری پر زور دیا ہے کہ کووڈ-19کی وبا سے معاشی بحالی کے مطلوبہ اہداف کے حصول کےلئے جامع اور مربوط کوششوں کی ضرورت ہے جن کے تحت سب سے پہلے وبا کے خاتمہ کےلئے بین الاقوامی تعاون میں اضافہ پر توجہ دینا ہوگی۔

مزید برآں اس حوالے سے اقتصادی بحالی کی کوششوں کے تحفظ کےلئے مربوط اقدامات کئے جائیں اور وبا سے متاثرہ خاندانوں، کمپنیوں اور صحت کے شعبہ پر خصوصی توجہ کے ساتھ ساتھ کورونا وائرس کی وبا سے زیادہ متاثر ہونے والے ممالک کی معاونت کے نظام میں بہتری کی ضرورت ہے۔ عالمی مالیاتی فنڈ نے کہا ہے کہ ماضی کے بحرانوں ، کورونا کے بحران کے خاتمہ اور معاشی بحالی کےلئے عالمی برادری کی جامع اور شراکت پرمبنی مربوط حکمت عملی کے تحت اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں