جے آئی ٹی کو تحقیقات مکمل کرنے کیلیے دو ہفتوں کی مہلت

سپریم کورٹ میں جعلی بینک اکاؤنٹس اور منی لانڈرنگ کے سلسلے میں کیس کی سماعت ہوئی۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نیئر رضوی نے بتایا کہ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کی اومنی گروپ کے بینک اکائونٹس سے متعلق پیش رفت رپورٹ آ چکی ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ جے آئی ٹی کو بنے ہوئے 3 ماہ ہوگئے جو تحقیقات میں اچھی پیش رفت کر رہی ہے۔ دوران سماعت جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ اومنی گروپ پر مختلف بینکوں کا 11 ارب روپے کا قرضہ ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ اومنی گروپ کی شوگر ملز کو تحویل میں لے لیتے ہیں، ان لوگوں نے قرضہ لے کر کھایا ہے۔ وکیل اومنی گروپ نے کہا کہ بینکوں کے ساتھ میٹنگ میں سیٹلمنٹ ہو گئی ہے، اومنی گروپ بینکوں کو دو شوگر ملز اور ڈیفنس کراچی میں پراپرٹی دینے کو تیار ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ یہ پیسہ بینکوں کا اپنا نہیں ہے بلکہ عوام کا ہے، اومنی گروپ کے ہنڈی کے کھاتے بھی مل گئے ہیں، لانچوں پر جتنے پیسے باہر گئے ہیں، وہ قوم کو واپس کر دیں فوجداری کیس ختم ہو جائیں گے۔جے آئی ٹی نے تحقیقات مکمل کرنے کیلئے عدالت سے 15 دسمبر تک کی مہلت مانگی ہےتاہم چیف جسٹس نے دو ہفتوں کا حکم دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں