جو اساتذہ ویکسی نیٹڈ نہیں وہ یکم اگست سے سکولوں میں نہیں پڑھا سکیں گے،31 اگست کے بعد ویکسی نیٹڈ عملے کے بغیر ٹرانسپورٹ نہیں چل سکے گی،اسد عمر

اسلام آباد۔: وفاقی وزیرمنصوبہ بندی ترقی واصلاحات وخصوصی اقدامات ونیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے سربراہ اسد عمر نے ویکسینیشن نہ کرانے والوں کو ڈیڈ لائن دیتے ہوئے کہا ہے کہ 31 اگست سے مزید بندشیں لگنے جا رہی ہیں، 31 اگست کے بعد ویکسینیشن نہ کرانے والوں کے کام کرنے پر پابندی ہو گی۔ وزیرِ اعظم کے معاونِ خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے اسد عمر نے بتایا کہ سب سے زیادہ ویکسین لگوانے کی شرح اسلام آباد میں 56 فیصد ہے، جبکہ سب سے کم ویکسین لگوانے کی شرح سندھ اور کراچی میں ہے۔سربراہ این سی او سی کا کہنا ہے کہ ایک سال سے زائد ہوگیا، ہم کورونا وائرس کے ساتھ زندگی گزار رہے ہیں، رمضان میں کورونا ایس او پیز کے لیے بڑا کام کیا گیا، سندھ حکومت بڑے مستعد انداز میں کورونا کو دیکھ رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیرِاعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہم ملک بند نہیں کر سکتے، یکم اگست سے ہوائی سفر کرنے والوں کے لیے ویکسی نیشن لازمی ہو گی، یکم اگست سے کم از کم ایک ڈوز لگوانے والے مسافر ہوائی جہاز پر سفر کر سکیں گے۔ اسد عمر نے کہا کہ اساتذہ کو بھی ویکسین لگوانا لازمی ہوگا، بچوں کی صحت پر سمجھوتہ نہیں کر سکتے، جن اساتذہ نے ویکسی نیشن نہیں کروائی وہ یکم اگست کے بعد اسکول نہیں جا سکتے، بسوں کے ڈرائیور، کنڈکٹرز کو ویکسی نیشن کروانا ہو گی۔ انہوں نے بتایا کہ ڈیٹا اور تجربے کو مدِ نظر رکھ کر پلان مرتب کیا ہے، ہم زور لگاتے ہیں تو وباءنیچے آتی ہے، پھر سب کھلتا ہے تو وبا بڑھ جاتی ہے، مکمل طور پر کورونا کی وباءسے نکلنا چاہتے ہیں تو ویکسینیشن حل ہے، 3 دن پہلے 6 لاکھ 80 ہزار ویکسی نیشن ہوئی جو ایک ریکارڈ تھا۔سربراہ این سی او سی نے کہا کہ ملک میں ویکسین مہم بڑے پیمانے پر تیزی سے جاری ہے، ویکسی نیشن کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے، بہتر کارکردگی میں وفاق کی تمام اکائیاں شامل ہیں۔

اسد عمر نے بتایا کہ گزشتہ روز تمام صوبوں نے ویکسی نیشن کے نئے ریکارڈ قائم کیے، ایس او پیز پر عمل درآمد کر کے کورونا سے بچا جا سکتا ہے، اس سے بچاوکا واحد حل احتیاط ہے۔انہوں نے کہا کہ بچوں کو اسکول لے جانے والے ڈرائیوار، کنڈیکٹر 31 اگست سے پہلے ویکسین لگوائیں، قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار بھی 31 اگست تک ویکسی نیشن کروا لیں، ویکسین لگوانے کا عمل آسان ترین کر دیا گیا ہے۔ اسد عمر نے بتایا کہ ہوٹلوں، ریستوران، میرج ہالز میں کام کرنے والوں کو بھی ویکسین لگوانا لازمی کر دیا ہے، ویکسین نہ لگوانے والے 31 اگست کے بعد ہوٹلوں، ریستورانوں، میرج ہالز میں کام نہیں کر سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ پبلک ڈیلنگ والے دفاتر میں کام کرنے والوں کیلئے بھی ویکسی نیشن کی آخری تاریخ 31 اگست ہے، 31 اگست تک ویکسی نیشن نہ کرانے والوں کے کام کرنے پر پابندی ہوگی۔

این سی او سی کے سربراہ نے کہا کہ 18 سال سے زائد عمر کے طالب علم 31 اگست تک ویکسینیٹ ہوں گے، بس، کوسٹرز ڈرائیورز، بس اڈوں اور عوامی مقامات پر کام کرنے والوں کے لیے ویکسین لگوانے کی آخری تاریخ بھی 31 اگست ہے۔اسد عمر نے کہاکہ آئندہ صورتِ حال دیکھ کر مزید شعبوں کی فہرست جاری کی جائے گی، ان سیکٹرز میں ویکسینیشن لازمی کر رہے ہیں جو بند ہونے سے متاثر ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں