بلوچستان کی پہلی خاتون کرکٹ کوچ سےملیے

بلوچستان میں پہلی مرتبہ خاتون کرکٹ کوچ کا تقرر کیا گیا ہے، خیر النسا کی تقرری کے بعد کرکٹ اکیڈمی میں خواتین کھلاڑیوں کی تعداد بھی بڑھ گئی۔ خیرالنساء نے واقعہ ٹائم سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان میں خواتین گھروں سے باہر نہیں نکلتیں، لیکن یہی لڑکیاں بلوچستان کےلیے کھیل میدان میں اچھی پرفارمنس دینگی تو ملک کا نام روشن ہوگا۔ انہوں بتایا کہ یہ پہلی اکیڈمی ہے جہاں وہ لڑکیوں کو ٹریننگ دے رہی ہیں، اس سے پہلے ایسی کوئی اکیڈمی نہیں تھی۔ کوچنگ کے آغاز کے وقت صرف دو لڑکیاں تھیں جنہیں پریکٹس کرواتی تھی تاہم اب 40 خواتین کرکٹرز پریکٹس کررہی ہیں۔ نوجوان کرکٹر کا کہنا تھا کہ مجھے خوشی ہے کہ ان کرکٹرز کو وہ سہولیات فراہم کی جارہی ہیں جو انہیں میسر نہیں تھیں۔ واضح رہے کہ خیرالنسا نے 2019 پاکستان کرکٹ بورڈ سے کرکٹ کوچنگ کا کورس کیا، جس کے بعد انہوں نے بلوچستان اسپورٹس بورڈ اکیڈمی میں کوچنگ کا آغاز کیا۔ نوجوان کرکٹ کوچ نے 2010 میں کیرئیر کا آغاز کیا اور قومی کرکٹ ٹیم کےلیے سلیکٹ ہوئیں۔ انہوں بتایا کہ نیشنل لیول پر تمام کرکٹرز کے ساتھ کھیلا لیکن ڈیانا بیگ کے ساتھ کھیل مزا آیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں